بنیادی صفحہ / سوئمنگ / فٹبال فیڈریشن فیصل صالح گروپ کا سینیٹ کو خط

فٹبال فیڈریشن فیصل صالح گروپ کا سینیٹ کو خط

لاہور: پاکستان فٹبال فیڈریشن کے فیصل صالح حیات گروپ نے سینیٹ کو خط لکھ دیا۔
پی ایف ایف (فیصل صالح گروپ) کی جانب سے سینیٹر سعود مجید کی سربراہی میں قائم سینیٹ کی اسپیشل اسٹینڈنگ کمیٹی برائے قومی اسپورٹس فیڈریشنز کو کرنل (ر) احمد یار لودھی کی طرف سے خط لکھ دیا گیا ہے، کنوینئر سینیٹر ڈاکٹر اشوک کمار کے نام لکھے گئے خط میں فیفا کی تسلیم شدہ پی ایف ایف کی جانب سے تفصیل میں تمام حقائق بیان کیے گئے ہیں۔
ذرائع کے مطابق خط میں کمیٹی کی 20 نومبر2015 کو ہونے والی میٹنگ میں آئی پی سی منسٹر ریاض پیرزادہ اور پی ایف ایف ایڈمنسٹریٹر کے بیانات کو حقائق کے منافی قرار دیا گیا ہے۔ ریاض پیر زادہ نے بیان میں کہا تھا کہ حکومت کی جانب سے پی ایف ایف کے معاملات میں مداخلت نہیں کی گئی،فیصل صالح حیات فیفا کی جانب سے فٹبال ڈیولپمنٹ کیلیے گرانٹس سے پی ایف ایف کے وکلا کو معاوضے دے رہے ہیں۔
پی ایف ایف کی جانب سے ریاض پیرزادہ کے دعووں کو تردید کی گئی اور حکومتی مداخلت کے واضح ثبوت سینیٹ کمیٹی کو مہیا کر دیے گئے جب کہ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ 2015 میں لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے پی ایف ایف میں ایڈمنسٹریٹر کی تقرری اور پی ایف ایف اکائونٹس کا کنٹرول ایڈمنسٹریٹر کو دیے جانے کے فیصلے کے بعد فیفا نے پاکستان فٹبال فیڈریشن کی گرانٹس معطل کر دی تھیں۔
پی ایف ایف کی جانب سے لکھے گئے خط میں فیفا کی جانب سے عائد پابندیوں کا باعث بننے والے حالات کو بیان کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ پاکستان فٹبال فیڈریشن پرائیویٹ باڈی ہے جو 1948سے فیفا کیساتھ منسلک ہے اور حکومت پاکستان 2014 میں انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی کے ساتھ ہونے والے معاہدے کی رو سے فیصل صالح حیات کی قیادت میں قائم پی ایف ایف کی آئینی باڈی کو تسلیم کرنے کی پابند ہے۔
یہ نکتہ بھی اٹھایا گیا ہے کہ پاکستان اسپورٹس بورڈ کی جانب سے 11جون 2014کو جاری ہونے والے ایس آر او کی رو سے اگر کوئی اسپورٹس فیڈریشن اپنے آئین میں اسپورٹس پالیسی کے مطابق تبدیلیاں نہیں کرتی تو اس کا پاکستان اسپورٹس بورڈ کے ساتھ الحاق خود بخود ختم ہو جائے گا جب کہ اس ایس آر او کے بعد پی ایف ایف کا اسپورٹس بورڈ سے الحاق ختم ہوچکا ہے۔
خط میں واضح کیا گیا ہے کہ فیصل صالح حیات کے فیفا عہدیداران سے قریبی تعلقات کی بنا پر پاکستان کو فیفا ورلڈ کپ 2018 کی ٹرافی کے ورلڈ ٹور میں ایک منزل کے طور پر شامل کیا گیا، اگر پاکستان کی فیفا رکنیت بحال نہ ہوئی تو پاکستان کو ٹرافی ٹور سے خارج کیے جانے کا خدشہ ہے۔
علاوہ ازیں خط میں پی ایف ایف کے معاملات میں سابق حکومتی خاندان کی مداخلت، پی ایف ایف ہیڈ کوارٹرز پر ہونے والے مسلح اور پر تشدد قبضے کے متعلق تمام ثبوت مہیا کرتے ہوئے کمیٹی کو بتایا گیا کہ فیفا کی جانب سے خط کے ذریعے واضح پیغام دے دیا گیا ہے کہ جب تک پی ایف ایف کا ہیڈ کوارٹر اور بینک اکائونٹس واپس فیفا کی تسلیم شدہ باڈی جس کے صدر فیصل صالح حیات ہیں کو نہیں واپس کیا جاتا پاکستان پر عالمی فٹبال کے دروازے بند رہیں گے۔

تعارف: عارف محمود خان

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

x

Check Also

سوئمنگ ٹریننگ کیمپ آج سے قیوم سٹیڈیم میں شروع ہوگی

تمام نئے اورپرانے سوئمنگ کھلاڑیوں کو دعوت دے رہے ہیں تاکہ نیشنل گیمز کیلئے تیاری ...

نیشنل جونیئر سوئمنگ چیمپئن شپ ، خیبرپختونخوا ٹیم کراچی کیلئے روانہ

پشاور( سپورٹس رپورٹر) خیبرپختونخوا سوئمنگ ایسوسی ایشن کی ٹیم نیشنل جونیئر سوئمنگ چیمپئن شپ میں ...